سانحہ 4 اپریل، 1979………. وسیم حجازی تحصیل پٹن

سانحہ 4 اپریل، 1979………. وسیم حجازی تحصیل پٹن
  • 36
    Shares

کشمیر کی تاریخ کا سیاہ باب تھا

تحریک کےہر فرد پر عتاب تھا

لوگوں نےتو ڈھائی تھی قیامت مگر

وادی کا ذرہ ذرہ تو خوناب تھا

چنگیزوہلاکو،  کو بھی شرما گئے

ابلیس بھی تو اُن کے ہمرکاب تھا

اوراقِ قران کو بھی تو بخشا نہیں

جیسے لوگوں نے پیا شراب تھا

کھیت کھلیانوں کوبھی روندا گیا

انگشت بدندان بھی ماہتاب تھا

ظالموں نےنوچ ڈالی داڑھیاں

اُداس بھی تو ممبرومحراب تھا

گُھس گئے زینہ گیر کی بستی میں وہ

روند ڈالا مہکاجو گُلاب تھا

فصلِ گُل بوئی تھی جو تحریک نے

وہ مٹانےکوعدو بیتاب تھا

خبر اُس کو تھی نہیں وہ بےخبر

اُس نے چاہا تھا،  وہ بس اک خواب تھا

تحریک کا تھا ہر فردکوہِ گراں

صبرکا وہ شکر کا آفتاب تھا

رُک جائےگا کارواں سمجھےتھے وہ

رُکنا کہاں تھا وہ جو اک سیماب تھا

چل پڑا وہ جانے کب سے اُن کے ساتھ

وہ حجازیؔ، پَرکٹا عُقاب تھا

Leave a Reply

Your email address will not be published.